Sufinama

یہی وظیفہ ہے عاشقوں کا یہ ہم فقیروں کی بھی صدا ہے

شاہ اکبرؔ داناپوری

یہی وظیفہ ہے عاشقوں کا یہ ہم فقیروں کی بھی صدا ہے

شاہ اکبرؔ داناپوری

MORE BYشاہ اکبرؔ داناپوری

    یہی وظیفہ ہے عاشقوں کا یہ ہم فقیروں کی بھی صدا ہے

    گرہ کشائے دو عالم اکبر ہمارا پیارا ابوالعلا ہے

    بَہار کے دن ہیں بارشیں ہیں سحابِ رحمت برس رہا ہے

    مزے میں ہے رند خوش ہے ساقی کہ میکدہ سب بھرا پورا ہے

    لگی ہے ایسی لگن کسی سے کہ مرنے پر بھی نہ چھٹ سکے گی

    یہ عاشقی دل لگی نہیں ہے جو ہم مٹے ہیں تو دل لگا ہے

    کسی کے جلوے کی آرزو ہے کسی کے ملنے کی ہے تمنا

    بڑے مزے کی یہ آرزو ہے کمال دلکش یہ مدعا ہے

    ہمیں کرو قتل شوق سے تم دکھاؤ تیر افگنی کے جوہر

    جو خواہشِ اے جان آپ کی ہے وہی ہمارا بھی مدعا ہے

    ہمارا قاصد ہمارا دل ہے بنائیں گے نامہ بر اسی کو

    ہوائے شوق اس کو لے اُڑے گی یہی کبوتر یہی صبا ہے

    تری نگاہوں کے تیر دل میں تسلیوں کا سبب ہوئے ہیں

    ترا ستم شانِ دلبری ہے تیری جفا سر بسر وفا ہے

    نہیں ہے کوئی شریک تیرا تو ہی ہے یکتا تو ہی یگانہ

    یہی سبق شیخ نے پڑھایا خدا تو بس ایک ہی خدا ہے

    ہے وہ بھی ایک وقت آنے والا کھلے گا جس دن سبھوں کا پردہ

    کہیں گے اس روز ہم بتوں سے کے اب بھی تم میں کوئی خدا ہے

    ہمارے دل نے کشش دکھائی وہی کشش تمہیں کھینچ لائی

    کروں کدھر کی طرف میں سجدہ کہ آج اجڑا مکاں بسا ہے

    برستی ہیں ننہی ننہی بوندیں زمین تر ہے ہوا ہے ٹھنڈی

    چمن ہے شاداب باغ رنگیں تمام صحرا ہرا بھرا ہے

    مزا ہے کیا ایسی زندگی کا کہ وہ کہیں اور ہم کہیں ہیں

    اُٹھائیں کب تک یہ بار فرقت ہمارا جینے سے دم خفا ہے

    فقیر آئے کہ شاہ آئے کوئی ہو زاہد ہو یا سبوکش

    ہے باب توبہ یہ آستانہ جہان بھر کے لئے کھلا ہے

    یہی ترانہ سنا چمن میں یہی صدا آئی جنگلوں سے

    یہی ہیں ہم رندوں کے بھی نعرے خدا کا پیارا ابوالعلا ہے

    ابوالعلائی ہے اپنا مشرب یہی ہے اکبرؔ ہمارا مذہب

    ازل کے دن سے ہمارے دل پر لکھا ہوا نام ابوالعلا ہے

    مأخذ :
    • کتاب : جذباتِ اکبر (Pg. 139)
    • Author :شاہ اکبر داناپوری
    • مطبع : آگرہ اخبار پریس، آگرہ (1915)
    • اشاعت : First

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY