Sufinama

نعت

MORE BY راقم دہلوی

    محبت آفریں کس کا بیاں ہے

    خدا سن سن کے محو داستاں ہے

    محمدؐ کی لکھے کیا وصف کوئی

    زبان کلک کی قدرت کہاں ہے

    تقاضائے دو عالم مصطفیٰ ہے

    تمنائے خدائے دو جہاں ہے

    نہاد پاک و ذات خاص یزداں

    گرامی نام و والا دود‌ ماں ہے

    کہ جس کی ذات سے وحدت نمایاں

    سراپا جلوۂ‌ قدرت عیاں ہے

    وہی قدرت کا نقش اولیں ہے

    وہی وحدت کا پہلا امتحاں ہے

    خدا اوس میں خدا میں وہ بہر رنگ

    چمن میں گل ہے گل میں بو نہاں ہے

    نبیؐ اور وہ نبیؐ یعنی محمدؐ

    شفیع خاکساران جہاں ہے

    محیط ذات سے جو قطرہ نکلا

    وہی قطرہ یہ بحر بیکراں ہے

    محمدؐ پر فدا ہے جان عالم

    کہ محبوب خدائے دو جہاں ہے

    نہ میں جانوں نہ میں سمجھوں کسی کو

    محمدؐ ہی محمدؐ ہے جہاں ہے

    تقاضا کم نہیں دیکھو نہ دیکھو

    یہ راقمؔ نقش سنگ آستاں ہے

    مآخذ:

    • کتاب : مرقع نعت (Pg. 16)
    • Author : راقمؔ دہلوی
    • مطبع : نظام المطابع، حیدرآباد

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY