Sufinama

نعت

MORE BYسنجر غازیپوری

    جو عشق خدا میں فنا ہو گیا

    نور بن کر وہ نور خدا ہو گیا

    جان و دل سے جو اس پر فدا ہو گیا

    کیا بتاؤں کہ وہ کیا سے کیا ہو گیا

    عشق تیرا جو اے دل ربا ہو گیا

    تھا جو قسمت کا لکھا ادا ہو گیا

    آ کے آنکھوں میں آنکھوں کا تارا بنا

    دل میں آ کر وہ بت دل ربا ہو گیا

    جو بحر محبت میں آ کر گرا

    ایسا ڈوبا کہ وہ لاپتا ہو گیا

    درد الفت کی کوئی دوا ہی نہیں

    درد جیوں جیوں بڑھا خود دوا ہو گیا

    عشق میں اس کو حاصل یہ رتبہ ہوا

    منہ سے سنجرؔ نے جو کچھ کہا ہو گیا

    مأخذ :
    • کتاب : دیوان سنجرالمعروف گلدستہ کلام سجنر (Pg. 2)
    • Author : سنجر غازیپوری
    • مطبع : شیخ غلام حسین اینڈ سنز تاجران کتب کشمیری بازار لاہور

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY