Sufinama

دل جس سے زندہ ہے وہ تمنا تمہیں تو ہو

ظفر علی خاں

دل جس سے زندہ ہے وہ تمنا تمہیں تو ہو

ظفر علی خاں

MORE BYظفر علی خاں

    دل جس سے زندہ ہے وہ تمنا تمہیں تو ہو

    ہم جس میں بس رہے ہیں وہ دنیا تمہیں تو ہو

    پھوٹا جو سینۂ شبِ تارِ الست سے

    اُس نورِ اولیں کا اجالا تمہیں تو ہو

    سب کچھ تمہارے واسطے پیدا کیا گیا

    سب غایتوں کی غایت اولٰی تمہیں تو ہو

    اس محفلِ شہود کی رونق تمہیں سے ہے

    اس محمل نمود کی لیلیٰ تمہیں تو ہو

    جلتے ہیں جبرئیل کے پر جس مقام پر

    اس کی حقیقتوں کے شناسا تمہیں تو ہو

    جو ماسوا کی حد سے بھی آگے گزر گیا

    اے رہ نور و جادہ اسریٰ تمہیں تو ہو

    پیتے ہی جس کے زندگئی جاوداں ملی

    اُس جاں فزا لال کے مینا تمہیں تو ہو

    اٹھ اٹھ کے لے رہا ہے جو پہلو میں چٹکیاں

    وہ درد دل میں کر گئے پیدا تمہیں تو ہو

    دنیا میں رحمتِ دو جہاں اور کون ہے

    جس کی نہیں نظیر وہ تنہا تمہیں تو ہو

    گرتے ہوؤں کو تھام لیا جس کے ہاتھ نے

    اے تاجدارِ یثرب و بطحا تمہیں تو ہو

    بپستا سنائیں جاکے تمہارے سوا کسے

    ہم بے کسانِ ہند کے ملجا تمہیں تو ہو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے