Sufinama

نیست جز آہنگ‌ عشق آواز موسیقار من

شاہ نیاز احمد بریلوی

نیست جز آہنگ‌ عشق آواز موسیقار من

شاہ نیاز احمد بریلوی

MORE BYشاہ نیاز احمد بریلوی

    نیست جز آہنگ‌ عشق آواز موسیقار من

    رب ارنی می نوازد بر لب ہر تار من

    میرے ساز کی آواز آہنگ عشق کے علاوہ کچھ نہیں ہے

    میرے بربط کا ہر تار رب ارنی گا رہا ہے

    بسکہ ہستم سایہ پرور زیر بال مہر یار

    یمن می گیرد ہما از سایۂ دیوار من

    میں اپنے محبوب کے پروں کے زیر سایہ سایہ پور ہوں

    میرے دیوار کے سایہ سے ہما برکت حاصل کرتا ہے

    اے نسیم گلشنی ہاں سوئے دکانم بیا

    تا رساند در مشامت بوئے جاں عطار من

    اے چمن کی نسیم ہاں میری دکان کی طرف آ

    تا کہ میرا عطار تیرے مشام تک روح کی خوشبو پہنچائے

    حسن خوباں بہر حق بینی مثال عینک عشق

    حاکم عقلم بدر شد از سر ہشیار من

    معشوقوں کا حسن حق دیکھنے کے لئے عینک کی طرح ہے

    میری نظارہ دیکھنے والی آنکھوں میں بینائی عطا کرتا ہے

    ہمچو دریائے محیط اے قطرہ ام شد موج زن

    چو بہ خود غرقم نمود آں قلزم زخار من

    میرا یہ قطرہ دریائے محیط کی طرح موجزن ہوگیا

    جب میرے اس بحر زخار نے خود میں مجھے غرق کر لیا

    کرد ما را بے نیاز آن قبلۂ اہل نیازؔ

    لطف فرما شد بہ احوال دل افگار من

    اس اہل نیازؔ کے قبلہ نے مجھے بے نیاز کردیا

    وہ میرے زخمی دل کے احوال کی طرف متوجہ ہوگیا

    مأخذ :
    • کتاب : دیوان نیاز بے نیاز (Pg. 98)
    • اشاعت : First

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY