Font by Mehr Nastaliq Web
Sufinama

دل دیا وحشت لیا اور خود کو رسوا کر لیا

عبدالطیف شوق

دل دیا وحشت لیا اور خود کو رسوا کر لیا

عبدالطیف شوق

MORE BYعبدالطیف شوق

    دل دیا وحشت لیا اور خود کو رسوا کر لیا

    مختصر سی زندگی میں میں نے کیا کیا کر لیا

    دل کی خاطر کفر بھی اس نے گوارا کر لیا

    ایک پتھر خود تراشا خود ہی سجدہ کر لیا

    آپ کی چاہت کا ملنا جان لوں گا مفت ہے

    جان دے کر بھی اگر میں نے یہ سودا کر لیا

    بال و پر اپنے سلامت ڈر اندھیروں کا نہیں

    چار تنکے جب بھی پھونکے ہیں اجالا کر لیا

    درد بخشا چین چھینا دل کے ٹکڑے کر دئے

    ہائے کس ظالم پہ میں نے بھی بھروسہ کر لیا

    شوقؔ جب تک سانس ہے تب تک ہے امید حیات

    کیوں ابھی سے آپ نے دل اپنا چھوٹا کر لیا

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے