Sufinama

اول ہے اس سے کوئی نہ آخر خدا کے بعد

بشیر ہلسوی

اول ہے اس سے کوئی نہ آخر خدا کے بعد

بشیر ہلسوی

MORE BYبشیر ہلسوی

    اول ہے اس سے کوئی نہ آخر خدا کے بعد

    وہ ابتدا سے پہلے وہی انتہا کے بعد

    موقوف جرم پر ہو جو دید ایار کا

    کیوں بڑھ نہ جائے ذوق گنہ یان سزا کے بعد

    اچھی نہ ہوں کبھی مرض عشق کی مریض

    جاتا رہے گا سارا مزایان شفا کے بعد

    میں باغ بوالعلا کا ہوں اک مرغ مدح خواں

    اُڑ جاؤں اب کہاں چمن آگرہ کے بعد

    دل پر ہماری آپ کا قبضہ تو ہوگیا

    ایسا نہ ہو کہ چھوڑئے اس کو قضا کے بعد

    مقبول ہورہی ہیں جو میری دعائیں آج

    پڑھتا ہوں میں درود و ثنا ہر دعا کے بعد

    اہل کرامت آپ کو مانوں گا جب بشیرؔ

    قالب سے روح نکلی جو ذکر خدا کے بعد

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY