Sufinama

ہاں وہی عشق و محبت کی جلا ہوتی ہے

فنا بلند شہری

ہاں وہی عشق و محبت کی جلا ہوتی ہے

فنا بلند شہری

MORE BYفنا بلند شہری

    ہاں وہی عشق و محبت کی جلا ہوتی ہے

    جو عبادت در جاناں پہ ادا ہوتی ہے

    جو گرفتار محبت ہیں یہ ان سے پوچھو

    ناز کیا چیز ہے کیا چیز ادا ہوتی ہے

    ان کی نظروں کی حقیقت کو کوئی کیا جانے

    ان کی نظروں میں ہر اک غم کی دوا ہوتی ہے

    کیوں نہ چہرے پہ ملوں خاک در یار کو میں

    یہی وہ خاک ہے جو خاک شفا ہوتی ہے

    رائیگاں سجدے بھی ہو جاتے ہیں مقبول کرم

    شامل حال اگر ان کی رضا ہوتی ہے

    جانے کیا چیز چھپی ہے ترے جلووں میں صنم

    ساری دنیا تیرے جلووں پہ فدا ہوتی ہے

    میں بھی ہوں ایک عنایت کی نظر کا طالب

    تیرے کوچے میں مریضوں کو شفا ہوتی ہے

    ان کے میخانے کو چھو آتی ہے جب فصل بہار

    پھول کھل جاتے ہیں مستی میں ہوا ہوتی ہے

    اے فناؔ ملتا ہے عاشق کو بقا کا پیغام

    زندگی جب رہ الفت میں فنا ہوتی ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY