Sufinama

احدیت کا جب ورود ہوا

خواجہ رکن الدین عشقؔ

احدیت کا جب ورود ہوا

خواجہ رکن الدین عشقؔ

MORE BYخواجہ رکن الدین عشقؔ

    احدیت کا جب ورود ہوا

    نور وحدت کا تب شہود ہوا

    واحدیت ہوئی نمود اس پر

    خالق و خلق کا وجود ہوا

    عالم ارواح کا ہوا پیدا

    شکر ہستی ہوا سجود ہوا

    بعد اس کے مثال کا عالم

    اس پر اجسام پھر فزود ہوا

    اتنے پردے جو ذات نے پہنے

    کوئی مومن کوئی یہود ہوا

    نور احمد نے جب تجلی کی

    سربسر خلق کو یہ سود ہوا

    عشقؔ عاشق ہوا اسی کوں دیکھ

    دل نالاں برنگ عود ہوا

    مأخذ :
    • کتاب : بہارمیں اردو کی صوفیانہ شاعری (Pg. 29)
    • Author : محمد طیب ابدالی
    • مطبع : اسرار کریمی پریس الہ آباد (1988)
    • اشاعت : First

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY