Sufinama

اے صبح مدینہ صل علیٰ سبحان اللہ، سبحان اللہ

عبدالرب صوفی

اے صبح مدینہ صل علیٰ سبحان اللہ، سبحان اللہ

عبدالرب صوفی

MORE BYعبدالرب صوفی

    اے صبح مدینہ صل علیٰ سبحان اللہ، سبحان اللہ

    سبحان اللہ، سبحان اللہ، سبحان اللہ، سبحان اللہ

    ’’الصبح بدا من طلعتہ واللیل دجیٰ من وفرقۃ‘‘

    جاتی ہے جدہر پر شوق نظر جلوہ جلوہ، جلوہ جلوہ

    کیا موسم ہے کیا عالم ہے تسبیح میں ٹھنڈے جھونکتے میں

    اک وجد میں ہے ڈالی ڈالی اک کیف میں ہے پتہ پتہ

    کوہ و صحرا وادی بستی ہر چار طرف مستی مستی

    کہتی ہے سانسیں لے لے کر ہر موج ہوا اللہ اللہ

    تاروں پر مستی چھائی ہے بے ہوشی ہے رعنائی ہے

    بیداری ہے بینائی ہے نورانی ہے، ذرہ ذرہ

    صوفیؔ اک حسرت لایا ہے ظلمت سے نور میں آیا ہے

    یہ دل بھی نورانی کردے انوارِ مدینہ کا صدقہ

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے