Sufinama

تمہید ہے سپاس ہے یا اقتباس ہے

شاہ آیت اللہ قادری

تمہید ہے سپاس ہے یا اقتباس ہے

شاہ آیت اللہ قادری

MORE BYشاہ آیت اللہ قادری

    تمہید ہے سپاس ہے یا اقتباس ہے

    قرآں میں جا بجا تری عظمت کا پاس ہے

    کوثر سے غسل دیں گے فرشتے قیاس ہے

    بطحا کی خاک کا مرے تن پر لباس ہے

    سمجھا ہے گر کوئی تو بتائے نا پھر ذرا

    پہنے ہوئے یہ کون بشر کا لباس ہے

    سجدے کو دل بھی جھکنے لگا ہے جبیں کے ساتھ

    شاید کوئے رسولؐ یہیں آس پاس ہے

    بیٹھا ہوا ہوں اشک ندامت لئے ہوئے

    اب تو متاع زیست یہی میرے پاس ہے

    تیرا ظہور منشائے تخلیق کائنات

    تیرا وجود کون و مکاں کی اساس ہے

    بگڑی وہی بنائیں گے میدان حشر میں

    مجھ کو بھروسہ مجھ کو یقیں مجھ کو آس ہے

    وابستہ اسم پاک سے آیت کا نام ہے

    ان کا غلام ہے یہ سند اس کے پاس ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے