Font by Mehr Nastaliq Web
Sufinama

ہے ظہور تیرا ہی چار سو تری شان جل جلالہ

تصدق علی اسد

ہے ظہور تیرا ہی چار سو تری شان جل جلالہ

تصدق علی اسد

MORE BYتصدق علی اسد

    ہے ظہور تیرا ہی چار سو تری شان جل جلالہ

    مہ و مہر میں بھی عیاں ہے تو تری شان جل جلالہ

    کروں حمد میں وہ زباں نہیں میرا ایسا نطق و بیاں نہیں

    نہ میں خوش رقم ہوں نہ خوش گلو تری شان جل جلالہ

    ہے ترا ہی کعبہ میں نور سب ترا بتکدہ میں ظہور سب

    تو یہاں بھی ہے اور وہاں بھی تو تری شان جل جلالہ

    تو دوئی کے عیب سے دور ہے تو صنم حرم میں ضرور ہے

    نہیں ایک ہونے میں گفتگو تری شان جل جلالہ

    ہے چمن بھی حسن نما ترا ہے گلوں میں رنگ ترا بھرا

    کہے کیوں نہ طوطیٔ خوش گلو تری شان جل جلالہ

    نہ دلوں میں تیرا پتہ لگا نہ بتوں میں تیرا نشان ملا

    کہاں اب کروں تری جستجو تری شان جل جلالہ

    یہاں قرب ہے نہ تو بعد ہے یہاں دید ہے نہ شنید ہے

    میری بے نشانی ہے چار سو تری شان جل جلالہ

    یہ نفخت فیہ کا بہانہ ہے وھو معکم کا فسانہ ہے

    ہے گل اسدؔ کی کچھ اور ہی بو تری شان جل جلالہ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے