Font by Mehr Nastaliq Web
Sufinama

قسمتے نیست بہ اغیار ز پیمانۂ ما

میکش اکبرآبادی

قسمتے نیست بہ اغیار ز پیمانۂ ما

میکش اکبرآبادی

MORE BYمیکش اکبرآبادی

    قسمتے نیست بہ اغیار ز پیمانۂ ما

    لا الٰہ ست کلید در میخانۂ ما

    ہر پیمانے میں غیر کا کوئی حصہ نہیں ہے،ہمارے میخانے کی چابہی لا الہ ہے۔

    ہست سوز دلِ ما مطلع دیوان وجود

    دین دنیا ہمہ حرفیست ز افسانۂ ما

    ہمارے وجود کے دیوان کا مطلع ہمارا سوز دل ہے ،دین و دنیا سب ہمارے ہی افسانے کی باتیں کر رہے ہیں۔

    ساکنان حرم بیخودی و سر دلیم

    بگزر از خویش بیائی چو بہ کاشانۂ ما

    حرم کے باشندے مستی اور دل کے راز سے سرشار ہو گۓ، اپنے آپ سے گزر اور ہمارے گہر کی طرف آ جا۔

    نہ نہادست جبیں غیرت ما پیش کسے

    بادل خویش مسلم شدہ یارانۂ ما

    ہماری غیرت ہمارے سر کو کسی کے آگے جہکنے نہیں دیتی، ہماری دوستی اپنے دل کے ساتھ مسلم ہو چکی ہے۔

    مستی ماست ز فیض شہ جیلاں میکشؔ

    اے خوشابخت و زہے رفعت پیمانۂ ما

    ہمارے پیمانے کی کیا خوش نصیبی اور بلندی ہے، کہ ہماری مستی اس شہ جیلان میکش کے فیض سے ہے۔

    مأخذ :
    • کتاب : Intikhab-e-Kalaam-e-Maikash (Pg. 65)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے