Sufinama

وہ نگاہِ مست کی گردشیں کہ ہزار جام نثار ہوں

عارف بلیاوی

وہ نگاہِ مست کی گردشیں کہ ہزار جام نثار ہوں

عارف بلیاوی

MORE BYعارف بلیاوی

    وہ نگاہِ مست کی گردشیں کہ ہزار جام نثار ہوں

    وہی دور بادۂ بےسبو تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

    نہ سکوں تھا کسی حال میں نہ قرار تھا کسی رنگ میں

    تمہیں پا کے بھی وہی جستجو تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

    مأخذ :
    • کتاب : تذکرہ شعرائے اتر پردیش حصہ دوئم (Pg. 214)
    • Author : عرفان عباسی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY