Sufinama

خواجہ توری صورت پہ میں واری

سنجر غازیپوری

خواجہ توری صورت پہ میں واری

سنجر غازیپوری

MORE BYسنجر غازیپوری

    خواجہ توری صورت پہ میں واری

    خواجہ تو ہے سجت سرداری

    جاؤں بل بل میں سو واری

    چھب ہے نیاری صورتیا ہے پیاری

    خواجہ توری صورت پہ میں واری

    بلک رووت ہے دکھیا تیہاری

    سدھ بدھ برہا نے ساری بساری

    آس موکو ہے سیاں تیہاری

    خواجہ توری صورت پہ میں واری

    نوری پریم ادا پہ میں واری

    تو نے ایسی نجر موہے ماری

    دل پہ چتون کی لاگی کٹاری

    خواجہ توری صورت پہ میں واری

    کب سے تورے دوار رہی ہوں ٹھاری

    سنو موری ارج اے بہاری

    لیہو کب تم کھبریا ہماری

    خواجہ توری صورت پہ میں واری

    سنجرؔ برہا اگن کی ہوں ماری

    اپنے خواجہ کی ہوں دکھیاری

    کب دیکھیں صورتیا وہ پیاری

    خواجہ توری صورت پہ میں واری

    مأخذ :
    • کتاب : دیوان سنجرالمعروف گلدستہ کلام سجنر (Pg. 29)
    • Author : سنجر غازیپوری
    • مطبع : شیخ غلام حسین اینڈ سنز تاجران کتب کشمیری بازار لاہور

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY