Font by Mehr Nastaliq Web
Sufinama

مری رنگیں بیانی سے ہوا حسنِ بیاں پیدا

رؤف کاکوروی

مری رنگیں بیانی سے ہوا حسنِ بیاں پیدا

رؤف کاکوروی

MORE BYرؤف کاکوروی

    مری رنگیں بیانی سے ہوا حسنِ بیاں پیدا

    مری رودادِ وحشت سے ہوئی ہے داستاں پیدا

    ہیولا برقِ خرمن کا ملا جب حسنِ برہم سے

    عناصر کے تصادم سے ہوئے دونوں جہاں پیدا

    کہاں کا جامِ جم ساقی کہاں کا چشمہ حیواں

    ترے رحمت کدے سے ہوں گے اب صاحبقراں پیدا

    اندھیرا ہی اندھیرا ہے کہاں جاؤں کسے ڈھونڈوں

    نہ لگتی آگ سینے میں نہ ہوتا یہ دھواں پیدا

    روفِؔ زار کو دیکھو تنِ بیمار کو دیکھو

    بتوں کے نقش پا سے یہ کرے گا کارواں پیدا

    مأخذ :
    • کتاب : تذکرہ شعرائے اتر پردیش جلد چودہویں (Pg. 128)
    • Author : عرفان عباسی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے