Sufinama

منہ چھپا کر رات بھر روتا ہے کیا

اظہر ہاشمی

منہ چھپا کر رات بھر روتا ہے کیا

اظہر ہاشمی

MORE BYاظہر ہاشمی

    منہ چھپا کر رات بھر روتا ہے کیا

    عمر اس کی یاد میں کھوتا ہے کیا

    منصفی ہے ہاتھ میں منصف ہیں جو

    دیکھنا ہے فیصلہ ہوتا ہے کیا

    دل کے ارمانوں کو دل میں قید رکھ

    چاہتا ہے جو بھی وہ ہوتا ہے کیا

    ایک پودا بھی نہیں اگ پائے گا

    تو زمین سنگ میں بوتا ہے کیا

    جو خوشی سے مست ہیں سرشار ہیں

    کیا خبر ان کو کہ غم ہوتا ہے کیا

    بھول جا گزری ہوئی باتیں اظہرؔ

    بوجھ غم کا رات دن ڈھوتا ہے کیا

    مأخذ :
    • کتاب : جذبات اظہر (Pg. 37)
    • Author : اظہر ہاشمی
    • اشاعت : First

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY