Sufinama

دے دیا ہے دل و جگر اس کو

اظہر ہاشمی

دے دیا ہے دل و جگر اس کو

اظہر ہاشمی

MORE BYاظہر ہاشمی

    دے دیا ہے دل و جگر اس کو

    جان کر یہ کہ با وفا ہوگا

    بعد مرنے کے کس کو کس کا پتا

    خاک میں جسم مل گیا ہوگا

    خیر سے آج کٹ گئی ہے عمر

    دیکھیے کل کے روز کیا ہوگا

    حسن پر ہے تمہیں غرور بہت

    اک نہ اک روز یہ فنا ہوگا

    رنج ہے فکر ہے تردد ہے

    تم نہ ہو گے تو اور کیا ہوگا

    نامہ بر نے دیا جو تھا کل خط

    دل میں میرے لکھا ہوا ہوگا

    عشق کی راہ سے نہیں ممکن

    ایک انسان بھی بچا ہوگا

    اک عمل ہی بروز حشر اظہرؔ

    توشۂ عاقبت ترا ہوگا

    مأخذ :
    • کتاب : جذبات اظہر (Pg. 22)
    • Author : اظہر ہاشمی
    • اشاعت : First

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY