Sufinama

بیدار کروں کس کو میں اظہار محبت

میر محمد بیدار

بیدار کروں کس کو میں اظہار محبت

میر محمد بیدار

MORE BYمیر محمد بیدار

    بیدار کروں کس کو میں اظہار محبت

    بس دل ہے مرا محرم اسرار محبت

    اے شمع دل افروز شب تار محبت

    تجھ سے ہی ہے یہ گرمیٔ بازار محبت

    ہر بوالہوس اس جنس کا ہوتا نہیں خواہاں

    جاں باختگاں ہوویں خریدار محبت

    ثابت قدم اس رہ میں جو ہیں جو شمع کے مانند

    سر دیتے ہیں کرتے نہیں اظہار محبت

    اے لالہ رخاں اس کے تئیں داغ نہ سمجھو

    پھولے ہیے مرے سینے میں گلزار محبت

    اے شیخ قدم رکھیو نہ اس راہ میں زنہار

    ہے سجدہ شکن رشتۂ زنار محبت

    گو ہم سے چھپایا بھی تو بیدار و لیکن

    انکار بھی تیرا ہے یہ اقرار محبت

    رہتا ہے مری جاں کہیں عشق بھی مخفی

    ظاہر ہے تری شکل سے آثار محبت

    مأخذ :
    • کتاب : دیوان بیدار مرتبہ: محمد حسین محوی (Pg. 31)
    • Author : میر محمد بیدارؔ
    • مطبع : شاہی پریس ٹزلیپکین، مدراس (1935)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے