Sufinama

مقام ہوش سے گزرا مکاں سے لا مکاں پہنچا

فنا بلند شہری

مقام ہوش سے گزرا مکاں سے لا مکاں پہنچا

فنا بلند شہری

MORE BYفنا بلند شہری

    مقام ہوش سے گزرا مکاں سے لا مکاں پہنچا

    تمہارے عشق میں دیوانۂ منزل کہاں پہنچا

    نظر کی منزلوں میں بس تمہیں حسن مجسم تھے

    متاع آرزو لے کر میں الفت میں جہاں پہنچا

    اسی نے عشق بن کر دو جہاں کو پھونک ڈالا ہے

    وہ شعلہ جو تری نظروں سے دل کے درمیاں پہنچا

    جنوں ظاہر ہوا رخ پر خودی پر بے خودی چھائی

    بہ قید ہوش میں جب بھی قریب آستاں پہنچا

    تم اپنی جستجو میں یہ مرا شوق طلب دیکھو

    تمہارے عشق میں لٹ کر بھی تم تک جان جاں پہنچا

    تعلق توڑ کر جان جہاں سارے زمانے سے

    میں پہنچا تھا جہاں مجھ کو تری خاطر وہاں پہنچا

    فناؔ وہ جلوہ گر ہونے لگے ہر بزم ایماں میں

    مرا دل لے کے جب مجھ کو سر کوئے بتاں پہنچا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY