Sufinama

عشق صنم سے ہو گیا اس کے اثر کو کیا کروں

خسرو کاکوروی

عشق صنم سے ہو گیا اس کے اثر کو کیا کروں

خسرو کاکوروی

MORE BYخسرو کاکوروی

    عشق صنم سے ہو گیا اس کے اثر کو کیا کروں

    بندہ ہوں تیرا اے خدا حسن بشر کو کیا کروں

    نور سحر سے روشنی دیر میں ہو ہوا کرے

    مجھ کو تو تم پسند ہو اپنی نظر کو کیا کروں

    باغ و بہار ہے تو کیا ساقی لالہ رو نہیں

    جام و سبو سے کیا غرض شمس و قمر کو کیا کروں

    مأخذ :
    • کتاب : تذکرہ شعرائے اتر پردیش حصہ سوئم
    • Author : عرفان عباسی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    speakNow