Font by Mehr Nastaliq Web
Sufinama

تیری رنگت بہار سے نکلی

مضطر خیرآبادی

تیری رنگت بہار سے نکلی

مضطر خیرآبادی

MORE BYمضطر خیرآبادی

    تیری رنگت بہار سے نکلی

    پھوٹ کر لالہ زار سے نکلی

    دل جو دھویا تو تو نظر آیا

    کیا ہی صورت غبار سے نکلی

    چھیڑ کر آزما لیا ہم نے

    تیری آواز تار سے نکلی

    مفت برباد ہے مری حسرت

    کیوں دل بے قرار سے نکلی

    بہر تعظیم حشر برپا ہے

    کس کی میت مزار سے نکلی

    جان مضطرؔ تیری محبت میں

    کیا ہی صبر و قرار سے نکلی

    مأخذ :
    • کتاب : تذکرہ شعرائے وارثیہ (Pg. 76)
    • مطبع : فائن بکس پرنٹرس (1993)
    • اشاعت : First

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے