Sufinama

نالہ اے بلبل نہ کر چرخ کہن جل جائے گا

سنجر غازیپوری

نالہ اے بلبل نہ کر چرخ کہن جل جائے گا

سنجر غازیپوری

MORE BYسنجر غازیپوری

    نالہ اے بلبل نہ کر چرخ کہن جل جائے گا

    آگ لگ جائے گی دنیا میں چمن جل جائے گا

    گرم آہیں کھینچ اے مجنوں سمجھ کر دشت میں

    ساتھ صحرا کے ترا دیوانہ پن جل جائے گا

    رنگ لائے گا مرا سوز محبت قبر میں

    استخواں ہو جائے گا شعلے کفن جل جائے گا

    آتش غم کی ترقی ہے جو روز افزوں یہی

    ہے یقیں اک روز اپنا تن بدن جل جائے گا

    کیا خبر تھی بے بسوں پر عشق برسائے گا آگ

    تیشہ بن جائے گا شعلہ کوہ کن جل جائے گا

    میں نہ سمجھا تھا کہ مجھ کو دیکھ کے ہوگا تو آگ

    خرمن ارمان و حسرت بے سخن جل جائے گا

    سنجرؔ آتش زباں کو کیوں جلاتے ہو کہ وہ

    سربسر خود صورت شمع لگن جل جائے گا

    مأخذ :
    • کتاب : دیوان سنجرالمعروف گلدستہ کلام سجنر (Pg. 10)
    • Author : سنجر غازیپوری
    • مطبع : شیخ غلام حسین اینڈ سنز تاجران کتب کشمیری بازار لاہور

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY