Font by Mehr Nastaliq Web
Sufinama

جب خدا سے لو لگائی جائے گی

سنجر غازیپوری

جب خدا سے لو لگائی جائے گی

سنجر غازیپوری

MORE BYسنجر غازیپوری

    جب خدا سے لو لگائی جائے گی

    پھر دعا کب کوئی خالی جائے گی

    تاکتے ہیں دل وہ میرا بار بار

    کیا کوئی حسرت نکالی جائے گی

    آنکھ ملتے ہی کسی معشوق سے

    پھر طبیعت کیا سنبھالی جائے گی

    گر کبھی چمکے گی وہ برق جمال

    آنکھ پھر کب اس پہ ڈالی جائے گی

    ہائے کب ہوگا انہیں میرا خیال

    آہ بیکس کی نہ خالی جائے گی

    چھوڑیئے اب شرم یہ فرمائیے

    حسرت دل کی کب نکالی جائے گی

    سونچ کر یہ ان کو چھیڑا ہم نے آج

    منہ سے ان کے کچھ دعا لی جائے گی

    کم سنی کی ضد جوانی میں بھی ہے

    این کی کب یہ خوردسالی جائے گی

    سخت جاں سنجرؔ ہوا ہے عشق میں

    تیغ اب قاتل کی خالی جائے گی

    مأخذ :
    • کتاب : دیوان سنجرالمعروف گلدستہ کلام سجنر (Pg. 16)
    • Author : سنجر غازیپوری
    • مطبع : شیخ غلام حسین اینڈ سنز تاجران کتب کشمیری بازار لاہور

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے