Font by Mehr Nastaliq Web
Sufinama

یہ تغیر رونما ہو جائے گا سوچا نہ تھا

سراج اجملی

یہ تغیر رونما ہو جائے گا سوچا نہ تھا

سراج اجملی

MORE BYسراج اجملی

    یہ تغیر رونما ہو جائے گا سوچا نہ تھا

    اس کا دل درد آشنا ہو جائے گا سوچا نہ تھا

    نت نئے راگوں کی تھی جس ساز ہستی سے امید

    وہ بھی بے صوت و صدا ہو جائے گا سوچا نہ تھا

    یوں سراپا التجا بن کر ملا تھا پہلے روز

    اتنی جلدی وہ خدا ہو جائے گا سوچا نہ تھا

    وہ تعلق جس کو دونوں ہی سمجھتے تھے مذاق

    اس قدر باقاعدہ ہو جائے گا سوچا نہ تھا

    جس سراجؔ اجملی سے تھیں امیدیں بے شمار

    وہ بھی نذر واہ وا ہو جائے گا سوچا نہ تھا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے