Sufinama

تیری نظروں پہ تصدق آج اہل ہوش ہیں

فنا بلند شہری

تیری نظروں پہ تصدق آج اہل ہوش ہیں

فنا بلند شہری

MORE BYفنا بلند شہری

    تیری نظروں پہ تصدق آج اہل ہوش ہیں

    جان جاں تیری نگاہیں میکدہ بر دوش ہیں

    عشق میں اہل وفا کتنے اذیت کوش ہیں

    خون دل کا ہو رہا ہے لب مگر خاموش ہیں

    اے نگاہ شوق کس منزل میں لے آئی مجھے

    دونوں عالم جلوہ گاہ یار میں روپوش ہیں

    مجھ کو تنہا دیکھنے والے نہ سمجھیں راز عشق

    میری تنہائی کے لمحے یار کے آغوش ہیں

    سرمدؔ و منصورؔ و شبلیؔ کی نظر سے دیکھیے

    ہوش والے ہیں وہی دنیا میں جو بے ہوش ہیں

    لن ترانی کی صدا پر مسکرایا تھا کوئی

    جتنے ذرے طور میں تھے آج تک بے ہوش ہیں

    اے فناؔ بادہ کشی میں یہ انہی کا ہے کرم

    ان کی مست آنکھوں سے پی کر بھی سراپا ہوش ہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY