Font by Mehr Nastaliq Web
Sufinama

بہار آتے ہی گلشن میں ہوئیں رنگینیاں پیدا

وحید اشرف وارثی

بہار آتے ہی گلشن میں ہوئیں رنگینیاں پیدا

وحید اشرف وارثی

MORE BYوحید اشرف وارثی

    بہار آتے ہی گلشن میں ہوئیں رنگینیاں پیدا

    چمن اندر چمن ہوتا ہے جنت کا گماں پیدا

    تجھے بھی کچھ خبر ہے اے نگہبان در جاناں

    ہوا لوح زمیں سے میری سنگ آستاں پیدا

    گری جیسے وہ بجلی وہ اٹھا شعلہ گلستاں کا

    نظر میں ہو چلا ہے پھر سے اپنے آشیاں پیدا

    نہ کیوں ہوں وارثیؔ نازاں میں اپنی جبہ سائی پر

    جبیں نے کردیئے میری ہزاروں داستاں پیدا

    مأخذ :
    • کتاب : تذکرہ شعرائے اتر پردیش جلد گیارہویں (Pg. 299)
    • Author : عرفان عباسی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے