Sufinama

بوسۂ رخ کا جو میں سائل ہوا

اوگھٹ شاہ وارثی

بوسۂ رخ کا جو میں سائل ہوا

اوگھٹ شاہ وارثی

MORE BY اوگھٹ شاہ وارثی

    بوسۂ رخ کا جو میں سائل ہوا

    ہنس کے بولے تو بھی اس قابل ہوا

    شہر چھوٹا خانہ ویرانی ہوئی

    عاشقی میں یہ ہمیں حاصل ہوا

    ناوک مژگان جاناں دیکھ کر

    چھن گیا سینہ جگر گھائل ہوا

    جس کی گنجائش نہ ہو کونین میں

    اس کے رہنے کا مکاں یہ دل ہوا

    بن کے آدم اپنے نظارہ کو خود

    جلوہ فرما وہ مہ کامل ہوا

    جس کے حامی حضرت وارثؔ ہوئے

    حل اسی کا عقدۂ مشکل ہوا

    سن کے اوگھٹؔ کی فغاں بولا وہ بت

    اس پہ کیا قہر خدا نازل ہوا

    مآخذ:

    • Book : فیضان وارثی المعروف زمزمۂ قوالی (Pg. 11)
    • Author : اوگھٹ شاہ وارثی
    • مطبع : جید برقی پریس، دہلی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY