Sufinama

دل لیا ایماں لیا اور بے سر و ساماں کیا

اوگھٹ شاہ وارثی

دل لیا ایماں لیا اور بے سر و ساماں کیا

اوگھٹ شاہ وارثی

MORE BY اوگھٹ شاہ وارثی

    دل لیا ایماں لیا اور بے سر و ساماں کیا

    یہ میرا کیسا بھرا گھر عشق نے ویراں کیا

    یہ خدا کی مصلحت اس کی شکایت کیا کریں

    دی بتوں کو اس نے دانائی ہمیں ناداں کیا

    دین اور دنیا کے جھگڑے سے جو دی مجھ کو نجات

    یہ بڑا اے حضرت عشق آپ نے احساں کیا

    عاشقوں کو پھر قضا آئی قیامت ہو گئی

    پھر سمند ناز کو اس ترک نے جولاں کیا

    دیکھیے رہتی ہے کل مقتل میں کس کی آبرو

    آج پھر سفاک نے ہے نیمچہ براں کیا

    اور اوگھٹؔ کیا تھا میرے پاس جو کرتا نثار

    حضرت وارثؔ کے صدقے دین اور ایماں کیا

    مآخذ:

    • Book : فیضان وارثی المعروف زمزمۂ قوالی (Pg. 21)
    • Author : اوگھٹ شاہ وارثی
    • مطبع : جید برقی پریس، دہلی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY