Font by Mehr Nastaliq Web
Sufinama

کعبۂ ابرو دکھا او بت خدا کے واسطے

خواجہ وزیر لکھنوی

کعبۂ ابرو دکھا او بت خدا کے واسطے

خواجہ وزیر لکھنوی

MORE BYخواجہ وزیر لکھنوی

    کعبۂ ابرو دکھا او بت خدا کے واسطے

    شکل مژگاں ہاتھ اٹھائے ہوں دعا کے واسطے

    دست گیروں کا نہ احساں ضعف نے ہونے دیا

    ہاتھ اٹھ سکتا نہیں میرا عصا کے واسطے

    جو کہ قانع ہو وہ بچ جائے فریب نفس سے

    دام کب صیاد پھیلائے ہما کے واسطے

    سچ تو یہ ہے آدمی سا کوئی خود مطلب نہیں

    کی عبادت بھی تو حور مہ لقا کے واسطے

    اشک خونی سے ہے گلگوں رخت عریانی وزیرؔ

    رو رہا ہوں اک گل رنگیں قبا کے واسطے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے