Font by Mehr Nastaliq Web
Sufinama

فلک سے گزری گئی تابہ لا مکاں فریاد

خواجہ وزیر لکھنوی

فلک سے گزری گئی تابہ لا مکاں فریاد

خواجہ وزیر لکھنوی

MORE BYخواجہ وزیر لکھنوی

    فلک سے گزری گئی تابہ لا مکاں فریاد

    پہنچ گئی ہے کہاں سے مری کہاں فریاد

    شب فراق میں کیا کیا ملے انیس مجھے

    رفیق درد شفیق آہ مہرباں فریاد

    دکھائے یار کرامت تو میں کروں اعجاز

    وہ بے دہن کرے باتیں میں بے زباں فریاد

    خموش نئے کی طرح ہوں میں دوری لب سے

    جو منہ لگاؤ تو سن لو فغاں فریاد

    کسی کی خاطر نازک کا جب خیال آیا

    زباں تک آکے ہوئی زیر لب نہاں فریاد

    وزیرؔ نالے صدائے شکست رنگ سے کر

    وہ بے دہن ہے کر اب تو بھی بے زباں فریاد

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے