Sufinama

رہا نہ ہوش کیا عشق میں یہ کیا ہم نے

اوگھٹ شاہ وارثی

رہا نہ ہوش کیا عشق میں یہ کیا ہم نے

اوگھٹ شاہ وارثی

MORE BY اوگھٹ شاہ وارثی

    رہا نہ ہوش کیا عشق میں یہ کیا ہم نے

    بتوں کو سجدہ کیا جان کر خدا ہم نے

    ہزار حیف نہیں کچھ خطر کہ روز الست

    اسی زباں سے کہا تھا بلیٰ بلیٰ ہم نے

    بتوں کا عشق ہوا جب نصیب واعظ

    کہ مدتوں کیا پہلے خدا خدا ہم نے

    تمہیں تو آ گئے دو دن میں جور و ظلم و ستم

    تمام عمر میں سیکھی ہے اک وفا ہم نے

    سنا ہے کہتا تھا اوگھٹؔ کہ دین و ایماں بھی

    نثار حضرت وارثؔ پہ کر دیا ہم نے

    مآخذ:

    • Book : فیضان وارثی المعروف زمزمۂ قوالی (Pg. 13)
    • Author : اوگھٹ شاہ وارثی
    • مطبع : جید برقی پریس، دہلی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY