Font by Mehr Nastaliq Web
Sufinama

سیر ہے تجھ سے مری جان جدھر کو چلئے

میر حسن دہلوی

سیر ہے تجھ سے مری جان جدھر کو چلئے

میر حسن دہلوی

MORE BYمیر حسن دہلوی

    سیر ہے تجھ سے مری جان جدھر کو چلئے

    تو ہی گر ساتھ نہ ہووے تو کدھر کو چلئے

    خواہ کعبہ ہو کہ بت خانہ غرض ہم سے سن

    جس طرف دل کی طبیعت ہو ادھر کو چلئے

    زلف تک رخ سے نگہ جاوے نہ اک دن کے سوا

    شام کو پہنچئے منزل جو سحر کو چلئے

    جب میں چلتا ہوں ترے کوچہ سے کترا کے کبھی

    دل مجھے پھیر کے کہتا ہے ادھر کو چلئے

    ان دنوں رات اسی فکر میں کٹتی ہے حسنؔ

    صبح کب ہووے کہ پھر یار کے گھر کو چلئے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    عابدہ پروین

    عابدہ پروین

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے