Font by Mehr Nastaliq Web
Sufinama

وہ امنگیں وہ ہا و ہو ہی نہیں

سیماب اکبرآبادی

وہ امنگیں وہ ہا و ہو ہی نہیں

سیماب اکبرآبادی

MORE BYسیماب اکبرآبادی

    وہ امنگیں وہ ہا و ہو ہی نہیں

    دل کہاں اب کہ آرزو ہی نہیں

    باغ عالم کا انقلاب نہ پوچھ

    اب وہ پہلا سا رنگ و بو ہی نہیں

    کیجیے کیا تصور آرائی

    کوئی تصویر روبرو ہی نہیں

    دیکھتا ہوں کہ آج اشکوں میں

    دل کے ٹکڑے بھی ہیں لہو ہی نہیں

    شوق سے وہ حجاب فرمائیں

    اب مجھے خبط جستجو ہی نہیں

    یہ دل نامراد کا عالم

    اور سب کچھ ہلے آرزو ہی نہیں

    ان سے شکوہ فضول ہے سیمابؔ

    قابل‌ التفات تو ہی نہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے