Font by Mehr Nastaliq Web
Sufinama

نظر کی منزل مقصود مہر و ماہ نہیں

سیماب اکبرآبادی

نظر کی منزل مقصود مہر و ماہ نہیں

سیماب اکبرآبادی

MORE BYسیماب اکبرآبادی

    نظر کی منزل مقصود مہر و ماہ نہیں

    یہ جلوہ گاہ کے پردے ہیں جلوہ گاہ نہیں

    بلا سے ابرو ہوا پر جو دستگاہ نہیں

    خدا کا شکر یہاں قحط اشک واہ نہیں

    خیال دیر نہیں خوف خانقاہ نہیں

    میں جانتا ہوں محبت کہیں گناہ نہیں

    جو ایک نقطہ پہ جم جائے وہ نگاہ نہیں

    نگاہ وہ ہے جو پابند جلوہ گاہ نہیں

    مٹا کے اپنی خودی ماسوا سے کر انکار

    سکون روح بجز ذکر لا الٰہ نہیں

    الگ ہے سب سے مرا جادۂ سخن سیمابؔ

    عوام جس کے ہیں پیرو وہ میری راہ نہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے