Sufinama

اے صنم مجھ کو کسی سے بھی سروکار نہیں بخدا تیرے سوا

شاہ اکبر داناپوری

اے صنم مجھ کو کسی سے بھی سروکار نہیں بخدا تیرے سوا

شاہ اکبر داناپوری

MORE BYشاہ اکبر داناپوری

    اے صنم مجھ کو کسی سے بھی سروکار نہیں بخدا تیرے سوا

    دین و ایمان سے بھی مطلب مجھے زنہار نہیں میں تو بندہ ہوں ترا

    راس آئی نہ اسے باغ کی بھی آب و ہوا عارضہ کچھ نہ گھٹا

    اچھی ہونے کی بس اب نرگس بیمار نہیں اس کا حافظ ہے خدا

    یہ وہی دل ہے کہ معشوقوں کا تھا مد نظر تھا ہجوم آٹھ پہر

    اب وہی دل ہے کہ کوئی بھی خریدار نہیں ایسا بازار گرا

    نبض ساقط ہی ہوئی آنکھیں بھی ہیں چھت سے لگیں ہے دم باز پسیں

    زندگی کے مرے اب کوئی بھی آثار نہیں یوں تو قادر ہے خدا

    کیسا کیسا تری فرقت میں ہوا حال مرا تونے پوچھا نہ ذرا

    تجھ سا بے رحم کوئی اے بت عیار نہیں اور اگر ہے تو بتا

    اپنے بیگانے ہوئے دوست بنے دشمن جاں خون کا پیاسا ہے جہاں

    اے صنم تو ہی مری شکل سے بیزار نہیں ایک عالم ہے خفا

    اکبرؔ خستہ سے کہہ دو کہ وہ تیار رہے ہم کمر باندھ چکے

    اب یہاں رہنے کا موقع کوئی زنہار نہیں قافلہ آگے بڑھا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    پرویز عالم

    پرویز عالم

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY