Font by Mehr Nastaliq Web
Sufinama

آہ کو درد چاہیے نغمے کو ساز چاہیے

شاہ تقی راز بریلوی

آہ کو درد چاہیے نغمے کو ساز چاہیے

شاہ تقی راز بریلوی

MORE BYشاہ تقی راز بریلوی

    آہ کو درد چاہیے نغمے کو ساز چاہیے

    راز کا ماجرا ہے یہ راز کو راز راز چاہیے

    ہجر کی لذتوں میں گم ہے میری ساری کائنات

    مجھ کو تو ہر سحر کے بعد شام دراز چاہیے

    کیا مرے ذوق بندگی چاہیے کوئی آستاں

    کیا مری آرزوئے دید جلوہ طراز چاہیے

    ذوق سجود کیا کرے نعت و درود کیا کرے

    معرفت حبیب کو قلب گداز چاہیے

    یعنی کہ ہو نیاز عشق نغمۂ سوز و ساز عشق

    جو ہو کسی کا راز عشق رازؔ وہ راز چاہیے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے