Sufinama

سوئے کعبہ یا سوئے کوئے بتاں لے جائے گا

اوگھٹ شاہ وارثی

سوئے کعبہ یا سوئے کوئے بتاں لے جائے گا

اوگھٹ شاہ وارثی

MORE BY اوگھٹ شاہ وارثی

    سوئے کعبہ یا سوئے کوئے بتاں لے جائے گا

    سچ بتا جوش جنوں مجھ کو کہاں لے جائے گا

    جائیں گے ملک عدم کو دین و ایماں چھوڑ کر

    سر پہ اپنے کون یہ بار گراں لے جائے گا

    ہے یقیں اس دل کے ہاتھوں جان ایک دن جائے گی

    کھینچ کر مقتل میں بہر امتحاں لے جائے گا

    خود ارادہ بت کدہ کا ہے نہ کعبہ کی ہوس

    جائیں گے واعظ جہاں پیر مغاں لے جائے گا

    چھوڑ کر بسمل گیا بے رحم یہ سمجھا نہ ہائے

    دل میں ارمان شہادت نیم جاں لے جائے گا

    کوئے جاناں بھی نہ چھوڑا خانہ ویرانی کے بعد

    دیکھنا ہے اب کہاں یہ آسماں لے جائے گا

    آئے تھے اوگھٹؔ جہاں میں ٹھوکریں کھانے کو ہم

    جائیں گے یہ آب و دانہ اب جہاں لے جائے گا

    مآخذ:

    • Book : فیضان وارثی المعروف زمزمۂ قوالی (Pg. 13)
    • Author : اوگھٹ شاہ وارثی
    • مطبع : جید برقی پریس، دہلی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY