Sufinama

ان سے امید التفات کہاں

طفیل ہشیارپوری

ان سے امید التفات کہاں

طفیل ہشیارپوری

MORE BYطفیل ہشیارپوری

    ان سے امید التفات کہاں

    میری تقدیر میں یہ بات کہاں

    کیا خبر بے خودی کے عالم میں

    لٹ گئی دل کی کائنات کہاں

    تو نوازے ترا کرم ورنہ

    میں کہاں اور تیری ذات کہاں

    دل کو اپنا لیا ترے غم نے

    اب غم دل سے ہو نجات کہاں

    تیری خاطر تجھے بھی چھوڑ دیا

    جیت کر ہم نے کھائی مات کہاں

    تم نہ سمجھو گے ماجرا دل کا

    تم کہاں دل کی واردات کہاں

    لاکھ سورج تراشتے جاؤ

    ختم ہوتی ہے غم کی رات کہاں

    ان کے آنے کا انتظار طفیل

    اس قدر فرصت حیات کہاں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    speakNow