Font by Mehr Nastaliq Web
Sufinama

ابتدا لا الہ الا اللہ

اکبر وارثی میرٹھی

ابتدا لا الہ الا اللہ

اکبر وارثی میرٹھی

MORE BYاکبر وارثی میرٹھی

    ابتدا لا الہ الا اللہ

    انتہا لا الہ الا اللہ

    خلد میں ہر شجر کے پتوں پر

    ہے لکھا لا الہ الا اللہ

    ہو گیا قلب آئینہ جس نے

    پڑھ لیا لا الہ الا اللہ

    تھا وہ مقبولِ بارگاہ جسے

    ورد تھا لا الہ الا اللہ

    مرض معصیت کے بیمارو

    لو دوا لا الہ الا اللہ

    پشت پر مہر مہر میں تحریر

    خوش نما لا الہ الا اللہ

    نزع میں قبر میں زبان پر ہو

    اے خدا لا الہ الا اللہ

    ہیں محمد رسولِ حق بر حق

    مشغلہ لا الہ الا اللہ

    دیکھ پھر دل میں نور کا عالم

    کہہ ذرا لا الہ الا اللہ

    دیکھا حضرت نے آسمانوں پر

    جا بجا لا الہ الا اللہ

    خاتم حضرت نے سلیمان پر

    نقش تھا لا الہ الا اللہ

    عرش و کرسی پہ نور کے خط سے

    لکھ دیا لا الہ الا اللہ

    گر طلب ہے بہشت کی اکبرؔ

    پڑھ سدا لا الہ الا اللہ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے