Sufinama

بشر نور_رب_العلا بن کے آیا

اکبر وارثی میرٹھی

بشر نور_رب_العلا بن کے آیا

اکبر وارثی میرٹھی

MORE BYاکبر وارثی میرٹھی

    بشر نور رب العلا بن کے آیا

    نئے رنگ سے جا بجا بن کے آیا

    کہیں لالہ و گل کہیں چاند سورج

    تجلائے ارض و سما بن کے آیا

    کہیں انبیا بن کے شاخیں دکھائیں

    کہیں صورت اولیا بن کے آیا

    کبھی شکل موسیٰ کہیں شکل عیسیٰ

    کبھی لیلیٔ ولرہا بن کے آیا

    ہے بننے بگڑنے میں کیا کیا بناوٹ

    جو بگڑا نئی شان کا بن کے آیا

    قل الروح من امر ربی کے نغمے

    سناتا ہوا مقتدا بن کے آیا

    اگر لہر آئی بنا شکل گوہر

    جو موج آ گئی بلبلا بن کے آیا

    کیا بلبلوں کو اسیر محبت

    چمن میں گل خوش نوا بن کے آیا

    بہت گل کھلے ہیں مگر اس چمن میں

    بہار آئی جب مصطفیٰ بن کے آیا

    بنے اولیا انبیا سب براتی

    جو دولہا حبیب خدا بن کے آیا

    محبت کی میراث اکبرؔ کو بخشی

    جو تو وارث حق نما بن کے آیا

    مأخذ :
    • کتاب : تذکرہ شعرائے وارثیہ (Pg. 132)
    • مطبع : فائن بکس پرنٹرس (1993)
    • اشاعت : First

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے