Sufinama

یا نبی دکھلایئے مکھڑا خدا کے واسطے

شاہ اکبر داناپوری

یا نبی دکھلایئے مکھڑا خدا کے واسطے

شاہ اکبر داناپوری

MORE BYشاہ اکبر داناپوری

    یا نبی دکھلایئے مکھڑا خدا کے واسطے

    ایک جلوہ اپنے حسنِ دلربا کے واسطے

    کیا کروں گا نذرِ خالق روزِ محشر میں غریب

    آپ کی تصویر لے جاؤں خدا کے واسطے

    ایسی آلودہ نگاہوں کو وہاں کب بار ہے

    اور آنکھیں ہیں جمال مصطفیٰ کے واسطے

    حق کا جویا ہے اگر تو اُس کو ملک دل میں ڈھونڈ

    آپ سے باہر نہ جا اس مدعا کے واسطے

    صورتِ کعبہ نکل جائیں یہاں سے بھی یہ بت

    ہے مکانِ دل شہِ ہر دوسرا کے واسطے

    ایک دن بھی تو نہ کی ہم سے بتوں نے کوئی بات

    بار ہا ہم نے دئے ان کو خدا کے واسطے

    کعبۂ دل پاک کر رکھا ہے میں نے یا نبی

    مہماں ہو آپ ہی سا اس سرا کے واسطے

    خاک نعلین شہِ دیں ہاتھ آجائے اگر

    ہو وہ سرمہ دیدۂ دل کی ضیا کے واسطے

    سب اسی کے واسطے ہیں جس قدر ہیں آفتیں

    آدمی پیدا ہوا رنج و بلا کے واسطے

    آدمی ہوں میری اصلیت ہے اکبرؔ بھول چوک

    ہے خطا میرے لئے میں ہوں خطا کے واسطے

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY