Sufinama

وہ شمع اجالا جس نے کیا چالیس برس تک غاروں میں

ظفر علی خاں

وہ شمع اجالا جس نے کیا چالیس برس تک غاروں میں

ظفر علی خاں

MORE BYظفر علی خاں

    وہ شمع اجالا جس نے کیا چالیس برس تک غاروں میں

    اکِ روز جھلکنے والی تھی سب دنیا کے درباروں میں

    رحمت کی گھٹائیں پھیل گئیں افلاک کے گنبد گنبد پر

    وحدت کی تجلی کوند گئی آفاق کے سینا زاروں میں

    گر ارض و سما کی محفل میں لولاک لما کا شور نہ ہو

    یہ رنگ نہ ہوں گلزاروں میں یہ نور نہ ہو سیاروں میں

    وہ جنس نہیں ایمان جسے لے آئیں دکانِ فلسفہ سے

    ڈھونڈے سے ملے گی عاقل کو یہ قرآں کے سیپاروں میں

    جو فلسفیوں سے کھل نہ سکا اور نکتہ وروں سے حل نہ ہوا

    وہ راز اک کملی والے نے بتلا دیا چند اشاروں میں

    جس میکدے کی ایک بوند سے بھی لب کج کلہوں کے تر نہ ہوئے

    ہیں آج بھی ہم بے مایہ گدا اس میکدے کے سرشاروں میں

    ہم حق کے علمبرداروں کا ہے اب بھی نرالا ٹھاٹ وہی

    بادل کی گرج تکبیروں میں بجلی کی تڑپ تلواروں میں

    ہیں کرنیں اک ہی مشعل کی ابوبکر و عمر عثمان علی

    ہم مرتبہ ہیں یارانِ نبی کچھ فرق نہیں ان چاروں میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے