Sufinama

تیرتھ میں تو سب پانی ہے ہووے نہی کچھو انہاے دیکھا

کبیر

تیرتھ میں تو سب پانی ہے ہووے نہی کچھو انہاے دیکھا

کبیر

MORE BYکبیر

    تیرتھ میں تو سب پانی ہے ہووے نہی کچھو انہاے دیکھا

    پرتیما سکل تو جڑ ہے بھائی بولے نہی بولاے دیکھا

    پُران کُران سبئے بات ہے یا گھٹ کا پردا کھول دیکھا

    انوبھو کی بات کبیرؔ کہے یہ سب ہے جھوٹھی پول ہے دیکھا

    تیرتھ میں تو سب پانی ہی پانی ہے۔ میں نے نہا کے دیکھا ہے۔ اس سے کچھ بھی نہیں ہوگا۔ ساری مورتیاں بے جان ہیں۔ میں نے آواز دے کے دیکھا ہے کوئی جواب نہیں ملتا۔ ’پُران‘ اور قران سب لفظ ہی لفظ ہیں۔ میں اپنے وجود کا پردہ اٹھا کر دیکھ چکا ہوں۔ کبیرؔ تو صرف تجربے کی بات کرتے ہیں (انبھو = تجربہ، گیان = عرفان) باقی سب جھوٹی باتیں ہیں۔ میں نے ان کی پول دیکھ لی ہے۔

    (ترجمہ: سردار جعفری)

    مأخذ :
    • کتاب : کبیر سمگر (Pg. 770)
    • Author :کبیر
    • مطبع : ہندی پرچارک پبلیکیشن پرائیویٹ لیمیٹید، وارانسی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY