Font by Mehr Nastaliq Web
Sufinama

مرا از جملہ حاجاتم رضائے تست مولانا

نعمتی پھلواروی

مرا از جملہ حاجاتم رضائے تست مولانا

نعمتی پھلواروی

MORE BYنعمتی پھلواروی

    مرا از جملہ حاجاتم رضائے تست مولانا

    تمنایم دگر از حق لقائے تست مولانا

    1. میری تمام حاجتوں میں اے مولانا مجھے آپ کی خوشی مطلوب ہے۔ میری دوسری تمنا اللہ سے آپ کی لقا یعنی آپ کی دید ہے۔ (یہ اشعار حضرت مولانا سید محمد وارث رسول نما بنارسی قدس سرہ کی مدح میں ہیں جو حضرت تاج العارفین شاہ مجیب اللہ قادری کے مرشد گرامی تھے)۔

    تو باشی شادماں از من نداری چشم بر عیبم

    امید از رحمت عامت وفائے تست مولانا

    2. آپ مجھ سے خوش و راضی رہیے عیب کو نہ دیکھئے۔ آپ کے شفقت عام سے اے حضرت مولانا اس درخواست کے پوری ہونے کی امید ہے۔

    ہمہ نشو و نمائے من ہمہ ایں ساز و برگ من

    ہمہ ایں بود و باش من عطائے تست مولانا

    3. اے حضرت مولانا میری تمام نشوو نما، میرا مال ومتاع اور میری یہ سب بود وباش آپ کی عطا ہے (یعنی آپ کی توجہات روحانی اورآپ کے فیض سے ہے۔ جومن جانب اللہ ہے)۔

    عجب نبود نوازی گر غریب نعمتیؔ خود را

    کہ در ذات تو خوئے مصطفائے تست مولانا

    4. کوئی تعجب نہیں کہ اپنے اس غریب نعمتی کو نوازیئے، کیونکہ آپ کی ذات میں آپ کے مصطفیٰ کی خصلتیں پائی جاتی ہیں۔

    مأخذ :
    • کتاب : نغمات الانس فی مجالس القدس (Pg. 140)
    • Author :شاہ ہلال احمد قادری
    • مطبع : دارالاشاعت خانقاہ مجیبیہ (2016)
    • اشاعت : First

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے