Sufinama

گیت

صوفی سنتوں نے بہت سی گیت اور ٹھمریاں لکھی ہیں جنہیں قوال صوفی خانقاہوں پر کثرت سے پڑھتے ہیں۔

143
Favorite

باعتبار

چھاپ_تلک

امیر خسرو

جا رے پتکوا لے آؤ کھبریا

شاہ تراب علی قلندر

کہوں کیا تیرے بھولنے کے میں واری

حلم آغائی ابوالعلائی

چلی سکھی پنیا بھرن کو چلی

نازاں شولا پوری

ارے البیلا

بیچین

آؤ پیروا ہمرے مندروا

شاہ تراب علی قلندر

کانہ کنور کے کارن رادھا

شاہ تراب علی قلندر

کیسے میں لاگوں پیا کے گروا

شاہ تراب علی قلندر

موری بتھا سن کانہ کہت ہیں

شاہ تراب علی قلندر

کا سو کہوں دکھ اپنا دئی

شاہ تراب علی قلندر

نیکی لگت موہے اپنے پیا کی

شاہ تراب علی قلندر

کوک نہ ری کوئلیا بیرن

شاہ تراب علی قلندر

لگتے ہی ساون ماس سکھی ری

شاہ تراب علی قلندر

بہت صحی توری اب نہ سہوں_گی

شاہ تراب علی قلندر

بابل- اب اپنا چلی میں دیس بدیس

شاہ تراب علی قلندر

اب ہی برس نا مگھوا رہ جا

شاہ تراب علی قلندر

چڑھ بد اٹا پر دیکھ سکھری

شاہ تراب علی قلندر

سوہی چونریا رنگ دے موکا

شاہ تراب علی قلندر

اے تیری نندیا میں لاگے آگ

شاہ تراب علی قلندر

کیسے پڑے کل جی کو ہمارے

شاہ تراب علی قلندر

بانکے_پیا سے موری لڑ گئی نجریا

شاہ تقی راز بریلوی

ساون ما چہن اور کی دھرتی

شاہ تراب علی قلندر

ہت سو موکا بلاوت سئیاں

شاہ تراب علی قلندر

سکھی جڑوا ری برہا اگن سب گات

شاہ نیاز احمد بریلوی

من میں بسے گھنشیام

طفیل ہشیارپوری

بھلے جوگئی موری گہلے بہیاں

شاہ تراب علی قلندر

جیون نیا پار اتار

طفیل ہشیارپوری

کیہرا - رسیلے پیو سو رہس رہس کے

شاہ تراب علی قلندر

نیند اچٹ گئی نیر بہے نت

شاہ کاظم قلندر

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

GET YOUR PASS
بولیے