Font by Mehr Nastaliq Web
Sufinama
Tufail Hoshiarpuri's Photo'

طفیل ہشیارپوری

1914 - 1993 | لاہور, پاکستان

ماہنامہ ’’محفل‘‘ لاہور کے مدیر، دنیائے شعر و ادب کی جانی پہچانی شخصیت ہیں

ماہنامہ ’’محفل‘‘ لاہور کے مدیر، دنیائے شعر و ادب کی جانی پہچانی شخصیت ہیں

طفیل ہشیارپوری کے دوہے

دل میں صدہا خواہشیں جی میں لاکھ ارمان

دنیا میں سکھ کس طرح پائے آج انسان

دولت مند کا راج ہے دولت مند کا تیج

بن دولت کے زندگی کانٹوں کی ہے سیج

دھوکے سے دولت ملے جھوٹ چڑھے پروان

سچائی کا ہو گیا دنیا میں فقدان

آج پاپ کے پیڑ میں پھول آئیں اور پھل

مل گیا گر کر خاک میں دھرم کا تاج محل

جانے عدل کو کیا ہوا گیا کہاں انصاف

قاتل کو ہر جرم سے دولت کرے معاف

دولت پائے ممبری دولت بنے وزیر

پگھلے زر کی آنچ سے لوہے کی زنجیر

آج کے انساں کا ہوا یوں کمزور ایمان

قسمیں کھانے کے لئے رہ گیا ہے قرآن

دولت ہو تو نیچ بھی آج اتم کہلائے

اونچا بننے کے لئے اونچے محل بنائے

دنیا کا ایسے ہوا دولت سے سنجوگ

دولت ہی کو رب کہیں اس دنیا کے لوگ

دولت ہی سے شان ہے دولت ہی سے آن

دولت ہے اس دور میں عزت کی پہچان

دولت ہی دستور ہے دولت ہی قانون

دولت کے سیلاب میں بہہ جاتا ہے خون

ساچی بات ہے دوستو رکھنا ہمیں معاف

دولت ہی کا نام ہے اس جگ میں انصاف

سکہ دولت کا چلے دنیا میں دن رات

نردھن کی اس دور میں کوئی نہ پوچھے بات

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

Recitation

Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

GET YOUR PASS
بولیے