Sufinama
Muztar Khairabadi's Photo'

مضطر خیرآبادی

1856 - 1927 | گوالیار, بھارت

ہندوستان کے معروف خیرآبادی شاعر اور جاں نثار اختر کے والد

ہندوستان کے معروف خیرآبادی شاعر اور جاں نثار اختر کے والد

مضطر خیرآبادی کے دوہے

31
Favorite

باعتبار

پی مورا من پیؤ کی پی دن ہیں میں رین

جیسے نجریا ایک ہے دیکھت کے دو نین

میں کھوٹی ہوں تم کھرے کھرے تمہارے کاج

کھوٹ کھوٹ سب چھانٹ دو کھرا بنا دو آج

تن پایا تب من ملا من پایا تب پیؤ

تن من دونوں پی کے ہیں پی کا نام ہے جیو

تم ہی جگت مہراج ہو اور مضطرؔ تمرے داس

جن حالن چاہو رکھو پر رکھنا اپنے پاس

چت مورا بے چت کیا مار کے نیناں بان

متر بنے تم چتر کے چتر کیا قربان

نینا وہی سراہیے جن نینا بچ لاج

بڑے بھئے اور بس بھرے تو آون کونے کاج

جب بپتا پڑ جات ہے چھوڑ دیت سب ہاتھ

دیت اندھیری رین میں کب پرچھائیں ساتھ

درشن جل کی پیاس ہے کچھ بھی نہیں ہے چاؤ

تم جگ داتا بج رہے تو کام ہمارے آؤ

تن میٹے من وار دے یہی پریت کی آن

جو اپنا آپا تجے سو وا کا داسی جان

مالک ہی کے نام کی مالا پھیرت لوگ

مالک میٹے تب مٹے نپٹ بپت کا روگ

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

بولیے