Sufinama
Amir Khusrau's Photo'

امیر خسرو

1253 - 1325 | اتر پردیش, بھارت

چکوا چکوی دو جنے ان مارے نہ کوے

اوہ مارے کرتار کے رین بچھوہی ہوے

سیج سونی دیکھ کے روؤں دن رین

پیا پیا کہتی پھروں پل بھر سکھ نہی چین

بھائی رے ملاح ہم کو پار اتار

ہاتھ کو دیؤں گی مندرا گلے کو دیؤں گی ہار

خسروؔ رین سہاگ کی جاگی پی کے سنگ

تن میرو من پیو کو دوؤ بھئے ایک رنگ

پنکھا ہو کر میں ڈلی ستی تیرا چاؤ

مج جلتی جنم گئی تیرے لیکھن بھاؤ

دیکھ میں اپنے حال کو روؤں زار و زار

وے گنونتا بہت ہیں ہم ہیں اوگن ہار

شیام سیت گوری لے جن مت بھئی انیت

ایک پل میں پھر جات ہے جوگی کاکے میت

وہ گئے بالم وہ گئے ندیا کنار

آپے پار اتر گئے ہم تو رہے ایہی پار

گوری سووے سیج پر مکھ پر ڈارے کیس

چل خسروؔ گھر آپنے رین بھئی چہوں دیس