Sufinama
noImage

جمال

1568 - 1593 | ہردوئی, بھارت

دوہے کہنے کے لئے مشہور

دوہے کہنے کے لئے مشہور

جمال کے دوہے

41
Favorite

باعتبار

جملا ایسی پریت کر جیسی نس ار چند

چندے بن نس سانولی نس بن چندو مند

جملا جا سوں پریت کر پریت سہت رہ پاس

نا وہ ملے نہ بچھڑئے نا تو ہوئے نراس

جملاؔ ایسی پریت کر جیسی مچھ کرائے

ٹک ایک جل تھی ویچھڑے تڑپھ تڑپھ مر جائے

ملے پریت نہ ہوت ہے سب کاہو کیں لال

بنا ملیں من میں ہرش سانچی پریت جمالؔ

جملاؔ جوبن پھول ہے پھولت ہی کملائے

جان بٹاؤ پنتھسری ویسے ہی اٹھ جائے

ابسی چین چت رین دن بھجہیں کھگادھپدھیائے

سیتا پتی پد پدم چہ کہہ جمالؔ گن گائے

جملا ایسی پریت کر جیوں بالک کی ماے

من لے راکھے پالنے تن پانی کوں جائے

جب جب میرے چت چڑھئے پریتم پیارے لال

ار تیکھے کروت جیوں بیدھت ہِیو جمالؔ

مور مکٹ کٹی کاچھنی مرلی سبد رسال

آوت ہے بنی ومل کے میرے لال جمالؔ

یا تن کی بھٹی کروں من کوں کروں کلال

نیناں کا پیالہ کروں بھر بھر پیو جمالؔ

دُسساسن اینچن اچت بھری بسن کی مال

چیر بدھایو دروپدی رچھا کری جمالؔ

رادھے کی بیسر بچیں بنی امولک بال

نندکمار نرکھت رہیں آٹھوں پہر جمالؔ

جملا پریت نہ کیجیے کاہو سوں چت لائے

الپ ملن بچھوڑن بہت تڑپھ تڑپھ جیہ جائے

سکل شترپتی بس کیے اپنے ہی بل بال

سبلا کں ابلا کہے مورکھ لوگ جمالؔ

جم جوگن میں بھئی گھال گلے مرگ چھال

ون ون ڈولت ہوں پھروں کرت جمالؔ جمالؔ

جملا لٹو کاٹھ کا رنگ دیا کرتار

ڈوری باندھی پریم کی گھوم رہیا سنسار

پیہ کرن سب ارپیو تن من جوبن لال

پیا پیر جانیں نہیں کس سوں کہوں جمالؔ

پریت جو کیجئے دیہہ دھر اتم کل سوں لال

چکمک جگ جل میں رہئے اگن نہ تجے جمالؔ

جملا ایسی پریت کر جیسی کیس کرائے

کے کالا کے اوجلا جب تب سر سوں جائے

جملا سہو جگ ہوں پھری باندھ کمر مرگ چھال

اجہوں کنت نہ مانہی اوگن کون جمالؔ

جوگنی ہوے سب جگ پھری کمری باندھی مرگچھال

بچھرے ساجن نا ملے قارن کون جمالؔ

جوبن آئے گاہکی نیناں ملے دلال

گاہک آئے لین کوں بیچو کیوں نہ جمالؔ

جملا کرئے تے کیا ڈریں کر کر کیا پچھتائے

روپے پیڑ ببول کا عام کہاں تیں کھاے

سرون چھانڑی ادھرن لگے یہ الکن کے بال

کام ڈسنی ناگنی جہیں، نکسے نانہیں جمالؔ

جملا جیہ گاہک بھئے نینا بھئے دلال

دھنی وست نہیں ویچ ہی بھولے پھرت جمالؔ

ساجن وسرایا بھلا سکریا کرے بے حال

دیکھو چتر وچار کے سانچی کہے جمالؔ

یا تن کھاکھ لگائے کے کھاکھا کروں تن لال

بھیش انیک بناے کئے بھیٹوں پیا جمالؔ

پریت ریتی اتی کٹھن پریت نہ کیجئے لال

ملے کٹھن وچھرن بہت نت جیہ جرئے جمالؔ

سجّن ہت کنچن کلش توری نہاریہ حال

درجن ہت کمار گھٹ بنسن جرے جمالؔ

کیو کریجو کانتھری کری ڈور پیہ لال

سانس سوئی سینوت پھروں، آٹھوں پہر جمالؔ

ہرے پیر تاپیں ہری برد کہاوت لال

مو تن میں ودن بھری سو نہی ہری جمالؔ

جملا ایک پرب چھبی چند مدھے ووچند

تا مدھیے ہوئے نیکسے کیہر چڑھے گیند

تیہ نندی پیہ ساسو سو کلہ کری تتکال

سانجھ پرت سونو بھون بجھئی دیپ جمالؔ

کبھہوں نہ چھن ٹھہرت ہیں مدھوکر نیناں لال

پہپ ادھک بہو روپ کے ہیرت پھریں جمالؔ

پہریں بھوشن ہوت ہے سب کے تن چھبی لال

تو تن کنچن تے سرس جوتی نہ ہوت جمالؔ

مور مکٹ کٹی کاچھنی گل پھولن کی مال

کہہ جانوں کت جات ہیں جگکی جین جمالؔ

سب گھٹ مانہی رام ہے جیوں گرست میں لال

گیان گرو چکمک بنا پرکٹ نہ ہوت جمالؔ

لوک جو کاجر کی لگی انگ لگے ار لال

آج اُنیدے آئیے جاگے کہاں جمالؔ

سیام پوتری سیت ہر اروں برہم چکھ لال

تینوں دیون بس کرے کیوں من رہے جمالؔ

پری کٹاری ورہ کی ٹوٹ رہی ار سال

موئیں پیچھیں جو ملو جیت ملو جمالؔ

من گراہک کے پاس ہیں نینا بڑے رسال

گھٹت بڑھت بہو بھاؤ کری ملے جو وست جمالؔ

یا تن کی جوتی کروں کاڑھ رنگاؤں کھال

پاتھن سے لپٹی رہوں آٹھوں پور جمالؔ

جگ ساگر ہے اتی گہر لہری وشیں اتی لال

چڑھی جہاز اتی نام کی اتریں پار جمالؔ

ڈگمگ نین سسگمگے ومل سو لکھے جو بال

تسکر چتونی سیام کی چت ہر لیو جمالؔ

الک جو لاگی پلک پر پلک رہی تہں لال

پریم کیر کے نین میں نیند نہ پرئے جمالؔ

یا تن کی ساریں کروں پریت جو پاسے لال

ستگرو داؤں بتائیا چوپر رمے جمالؔ

ترور پت نپت بھیو پھر تپیو تتکال

جوبن پت نپت بھیو پھر پتیو نہ جمالؔ

ودھی بدھی کے سب ودھی جپت کوؤ لہت نہ لال

سو ودھی کو ودھی نند گھر کھیلت آپ جمالؔ

نینا کہیت پنگنی کہو تمہانرے لال

ڈسے پچھے سبدن کچھو لاگت نانہی جمالؔ

کر گھونگھٹ جگ موہیے بہت بھلائے لال

درسن جنیں دکھائیاں درسن جوگ جمالؔ

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

بولیے